خبریں‏دنیا

ترکیہ، 68 ہزار سے زائد افغان مہاجرین کو ملک بدر کردیا گیا

کابل(بی این اے) ترکیہ کے ڈائریکٹوریٹ جنرل آف امیگریشن نے اعلان کیا ہے کہ گزشتہ سال کے دوران ملک سے 124,444 غیر قانونی تارکین وطن کو ملک بدر کردیا گیا ہے جن میں سے 68,290 افغان شہری تھے۔
علاوہ ازیں ترکی کی جانب سے ملک بدر کیے جانے والوں میں 12500 پاکستانی بھی شامل ہیں جب کہ باقی کا تعلق دیگر ممالک سے ہے۔
ترکی کی مائیگریشن ایجنسی کا کہنا ہے کہ وہ رواں سال کے دوران ملک سے متعدد غیر قانونی پناہ گزینوں کو ملک بدر کر دے گی۔ نئے سال میں افغان مہاجرین کو ملک بدر کرنے کا یہ پہلا قدم ہے، اس کے آغاز میں صرف چند دن ہی رہ گئے ہیں۔
ترک مائیگریشن ایجنسی کے ایک عہدیدار نے کہا یہ تارکین وطن پہلے ہوائی اڈے پر پہنچیں گے جہاں سے ان کو بچوں کے ہمراہ بھیجا جائے گا۔
ترکی کے اس اقدام کے جواب میں افغان وزیر امور مہاجرین خلیل الرحمن حقانی نے عندیہ دیا ہے کہ دنیا کے ممالک افغان مہاجرین کو زبردستی ملک بدر نہ کریں۔
گزشتہ سال افغان حکومت کے اس ادارے نے ایک وفد ترکی بھیجا تھا تاکہ اس ملک میں افغان مہاجرین کی صورتحال پر ترک حکام سے بات چیت کی جا سکے۔
دریں اثنا، ایران نے گزشتہ ایک سال کے دوران ہزاروں افغان مہاجرین کو زبردستی ملک سے نکال دیا ہے۔

مزید دکھائیں

متعلقہ مضامین

واپس اوپر بٹن