خبریں‏دنیا

‎روس افغانستان اور پاکستان کو گیس برآمد کرے گا: روسی نائب وزیراعظم

کابل(بی این اے) روس کے نائب وزیر اعظم الیگزینڈر نوواک نے کہا کہ اس بات کا امکان ہے کہ روس ایران کے ساتھ گیس پائپ لائن کے ذریعے اپنی قدرتی گیس افغانستان اور پاکستان کی منڈیوں میں بھیجے۔
‎نوواک نے Taas کے ساتھ ایک انٹرویو میں کہا کہ اگر میں اپنے تزویراتی نقطہ نظر کا اظہار کروں تو ایران کی سرزمین سے گیس پائپ لائن کے ذریعے افغانستان اور پاکستان کو گیس برآمد کرنا ممکن ہے۔
‎روس کے نائب وزیر اعظم نے مزید اعلان کیا کہ روس اور ایران تیل اور گیس کی سپلائی کے تبادلے پر کام کر رہے ہیں اور اس کام کے طریقوں اور عمل درآمد کے حل کا جائزہ لے رہے ہیں۔
‎ اس اعلی سطحی روسی عہدیدار کے مطابق پہلے مرحلے میں پچاس لاکھ ٹن تیل اور دس ارب کیوبک میٹر گیس کی فراہمی ممکن ہے۔
‎ نومبر کے اوائل میں ایران اور روس کے درمیان بین الحکومتی تجارتی اور اقتصادی تعاون کے کمیشن میں بھی یہ مسئلہ زیر بحث آیا تھا۔
‎روس کے نائب وزیر اعظم نے کہا کہ اس نظریے کو عملی جامہ پہنانے میں کوئی خاص رکاوٹیں نہیں ہیں۔
‎کہا جارہا ہے کہ یوکرائن کی جنگ کے بعد روس سے یورپ کو تیل اور گیس کی برآمد میں مسائل پیدا ہوگئے ہیں اس لیے وہ مشرق کے لیے راستے تلاش کر رہا ہے، اور ایشیائی ممالک میں روس کو یورپ سے بہتر مارکیٹ مل جائے گی۔
‎افغانستان کی وزارت صنعت و تجارت نے ایک بیان میں روسی فیڈریشن کے اس اقدام کا خیر مقدم کیا ہے۔

مزید دکھائیں

متعلقہ مضامین

واپس اوپر بٹن